98

کامن ویلتھ گیمز: پاکستانی پہلوانوں کا بیرون ملک ٹریننگ کا مطالبہ

پاکستانی پہلوانوں نے کامن ویلتھ گیمزکی تیاری کے لیے بیرون ملک ٹریننگ کا مطالبہ کردیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ جدید ٹریننگ کے بغیر میڈلز کا حصول مشکل ہے جبکہ کوچ سہیل رشید کا کہنا ہے کہ پہلوانوں کو بیرون ملک ٹریننگ دلائی جائے، اگر وہ میڈلز نہ جیتے تو سارے اخراجات وہ اپنی پنشن کی رقم سے ادا کریں گے۔
اپریل میں ہونے والے کامن ویلتھ گیمز میں 6پہلوان پاکستان کی نمائندگی کریں گے لیکن قومی اپہلوانوں کو نہ تو بیرون ملک کسی ایونٹ میں شرکت کا موقع مل رہا ہے اور نہ انہیں جدید ٹریننگ کی سہولت مہیا کی گئی جبکہ بھارتی پہلوان امریکا میں ٹریننگ کر رہے ہیں۔
کوچ سہیل رشید پہلوانوں کو بیرون ملک ٹریننگ نہ ملنے کی وجہ پریشان ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ پہلوانوں کو جدید طرز کی ٹریننگ کےلیے بیرون ملک بھیجا جائے، اگر پہلوان میڈلز نہ جیت پائے تو بیرون ملک ٹریننگ کے اخراجات وہ اٹھائیں گے۔
کامن ویلتھ گیمز میں اب تک پاکستانی پہلوان 20 گولڈ سمیت 39 میڈلز جیت چکے ہیں۔ امید ہے کہ اگر حکومت پہلوانوں کی جدید طرز کی ٹریننگ کا بندوبست کرے تو گولڈ کوسٹ میں بھی مایوس نہیں کریں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں