144

پیپلز پارٹی کی خاتون رکن سندھ اسمبلی شہناز انصاری قاتلانہ حملے میں جان کی بازی ہار گئیں

نوشہرو فیروز: پاکستان پیپلزپارٹی کی رکن سندھ اسمبلی شہناز انصاری کو ان کے بہنوئی کے بھتیجوں نے ایک قاتلانہ حملے میں قتل کر دیا۔
سندھ پولیس کے مطابق پیپلز پارٹی سے تعلق رکھنے والی رکن سندھ اسمبلی شہناز انصاری پر نوشہرو فیروز کے قریب گاﺅں ”چاناری“ میں فائرنگ کی گئی جس میں وہ شدید زخمی ہوگئیں۔ خاتون رکن اسمبلی کو فوری طور پر شدید زخمی حالت میں نواب شاہ ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہوگئیں۔ عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ فائرنگ کا واقعہ زمین کے تنازعہ کے باعث پیش آیا ، انہیں 3 گولیاں لگیں جس کے باعث وہ جانبر نہ ہوسکیں۔
مقتول رکن سندھ اسمبلی کے بھائی کا کہنا ہے کہ شہناز انصاری اپنے بہنوئی کے چہلم پر آئی تھیں، مخالفین نے انہیں دھمکیاں دی تھیں اور چہلم میں شریک ہونے سے روکا تھا لیکن وہ پھر بھی رسم چہلم میں شریک ہوئیں۔ جب چہلم کے پروگرام کا اختتام ہوا تو وہاں موجود ملزمان نے سیدھی فائرنگ کرکے خاتون کو قتل کردیا۔
نجی ٹی وی اے آر وائی نیوز کے مطابق شہناز انصاری کا اپنے بہنوئی کے بھتیجوں کے ساتھ زمین کا تنازعہ چل رہا تھا، انہوں نے خاتون کو پہلے بھی قتل کی دھمکیاں دی تھیں، جس کے حوالے سے پولیس کو بھی آگاہ کردیا گیا تھا لیکن انہیں کوئی سیکیورٹی فراہم نہیں کی گئی ، رسم چہلم کے پروگرام میں شہناز انصاری کرسی پر بیٹھی ہوئی تھیں، پروگرام کے اختتام پر ان کے بہنوئی کے بھتیجوں نے فائرنگ کرکے انہیں قتل کیا اور موقع سے فرار ہوگئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں